Home / Business / موجودہ حکومت نے استعمال شدہ اشیا پر 19 فیصد ٹیکس لگا دیا
19 text increase in import goods

موجودہ حکومت نے استعمال شدہ اشیا پر 19 فیصد ٹیکس لگا دیا

عوامی استعمال کی دیگر بنیادی اشیا کی طرح حکومت نے استعمال شدہ ملبوسات اور اشیا کو بھی ٹیکس وصولی کا ذریعہ بنا لیا ہے غریب طبقہ استعمال شدہ ملبوسات اور اشیا پر 19 فیصد ٹیکس ادا کررہا ہے۔

حکومتوں نے پرانی اشیا کی درآمدی ڈیوٹی اور ٹیکسز میں مزید8 فیصد اضافہ کردیا، استعمال شدہ ملبوسات اور اشیا پر ڈیوٹی اور ٹیکسز میں اضافے سے پرانے ملبوسات ، جوتے ، کمبل اور دیگر اشیا کی قیمتوں میں بھی اضافہ ہوگیا ہے۔

درآمد کنندگان کے مطابق ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں کمی بھی استعمال شدہ ملبوسات اور اشیا کی قیمت میں اضافے کا سبب بن رہی ہے تاہم استعمال شدہ اشیا کی درآمد پر ڈیوٹی اور ٹیکسوں کی مجموعی شرح حکومت کے دور میں11فیصد سے بڑھا کر 19فیصد کردی گئی ہے جس میں 5فیصد جنرل سیلز ٹیکس 3 فیصد اضافی سیلز ٹیکس اور 5.5فیصد انکم ٹیکس اور 5فیصد کسٹم ڈیوٹی شامل ہیں۔

Check Also

پاکستان میں معاشی ترقی کا عمل جاری رہے گا، ورلڈ بینک

اسلام آباد: عالمی بینک نے کہا ہے کہ رواں مالی سال 2017-18 کیلیے پاکستان کی ...

Leave a Reply

%d bloggers like this: